Passage 18

رشوت ستانی اور بد عنوانی ہمارے معشرے کا حصہ بن چکی ہے۔ ان کا تعلق کسی ایک ادارے یا معاشرے کے کسی مخصوص حصے سے نہیں بلکہ یہ تو ہر محکمے اور ہر ادارے کا لازمی جزو نظر آتی ہیں۔ زندگی اب قطعاً سادہ نہیں رہی۔ درمیانہ طبقہ دولت مندوں کی نقل میں اپنے راستے سے بھٹک گیا ہے۔ جو لوگ اپنے وسائل کے اندر رہ کر زندگی نہیں گزارتے اور راتوں رات دولت مند بن جانے کے خواب دیکھتے ہیں، بہت جلد رشوت ستانی اور بدعنوانی کا شکار ہو جاتے ہیں۔

Bribery and corruption have become a part of our society. They are not limited to a particular institution or section of society; rather they seem to be part and parcel of every department and institution. Life is not simple any more. The middle class has gone astray in its emulation of the rich. Those who do not live within their means and dream of getting rich overnight soon fall victim to bribery and corruption.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *